تبصرہ کیجیے

ایمرجنسی

آجکل جس کسی سے پوچھو وہ یہی کہے گا کہ ایمرجنسی کا شوشہ بلکہ میلہ اسی کا کمبل چرانے کے لیے لگایا جارہا ہے۔
ویسے تو شیئرز کا کام کرنے والے دوستوں رشتے داروں سے حال پوچھنا ہو تو پہلے انڈکس دیکھ لینا چاہیے یہ نہ ہو کہ آپ بعد میں مناتے اور منتیں کرتے پھر رہے ہوں۔ اسدفعہ یہ ہوا کہ ادھر ایمرجنسی والی خبر آئی اُدھر یار لوگوں نے مارکیٹ کو چھ سو پوائنٹ نیچے سے ہی کھولا۔ سَٹوریوں اور بھاڑے پر لے کر کام کرنے والوں کی گھگھی بندھ گئی اب ہمارے دوست راحت صاحب لگے سیٹھ مشرف اور سیٹھ شوکت عزیز کے ناقابلِ اشاعت گُن گنوانے کہ یہ لوگ مارکیٹ کریش کر کے سستے پر مال اٹھائیں گے اور پھر اوپر لیجاکر بیچیں گے اسی لیے یہ شوشہ چھوڑا ہے۔
ایک دوست جو اپنا پلاٹ بیچنا چاہتے تھے وہ پراپرٹی ایجنٹ کے پاس گئے تو وہ بھی ایمرجنسی کو رو رہا تھا کہ شیخ رشید گروپ نے اسلام آباد نیو ایر پورٹ کے نام پر جو ہزاروں ایکڑ زمین بیچی اور جعلی ہاؤسنگ سوسائٹیاں بنائی ہیں اس کا کیس سپریم کورٹ میں دائر ہونے جارہا تھا اس سے بچنے کے لیے شیخ رشید چھوڑو نے یہ شوشہ چھوڑا ہے۔
سیاستدان اور کالم نگار یہ ثابت کر رہے ہیں کہ اپنا اقتدار بچانے کے لیے مشرف ساری قوم پر عزاب مسلط کر رہا ہے۔ مشرف یہی سمجھتا ہے کہ پاکستان مجھ سے ہے اگر میں نہیں تو خدانخواستہ سب تلپٹ ہوجائیگا۔
اسپر پھر مجھے ایک واقعہ یاد آرہا ہے۔ میری پہلی کمپنی میں تین سال سے ایک ہی گروپ مزدور یونین میں چلا آرہا تھا الیکشن کے دن قریب آئے تو الیکشن کمپین اور رابطے شروع ہوگئے اسی سلسلے میں موجودہ یونین کے حمایتی ایک صاحب رابطے کے لیے آئے اور نئے امید وار کے خلاف کافی کچھ کہا ساتھ ہی کہنے لگے کہ بس ” اس شخص کا صدر بننا مزدور اتحاد کی موت ہوگا” یہ بات سن کر ہمارے ایک ساتھی جنکا تعلق مردان سے تھا کہنے لگے کہ ” تمہارا بات ہم سب نے پورا سُنا اب میرا کہانی سنو۔ پرانے وقتوں میں ایک کسان کے خربوزے کا فصل گیڈر کھا جاتا تھا۔ کسان بڑا پریشان ہوا اور بہت سوچ کر رات کو اس نے پھندا لگا کر گیڈر کو پکڑ لیا۔ جب گیڈر کو وہ چھری سے مارنے لگا تو گیڈر نے شور مچا دیا کہ ” ماڑا! مجھ کو نہیں مارو ورنہ قیامت آجائیگا۔” کسان نے ڈر کر اسے چھوڑ دیا اور گیڈر سے پوچھا ” تم ایسا کونسا ولی ہے جس کو مارنے سے ساری دنیا میں قیامت آجائیگا؟گیڈر ذرا دور جاکر بولا ” تم مجھے مار دیتے تو میرے لیے تو قیامت ہی ہوتی نا”۔

سچی بات ہے کہ اقتدار چھن جانے سے زیادہ بڑی ایمرجنسی مشرف اور چوہدری گروپ کے لیے اور کیا ہوسکتی ہے؟

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: