9 تبصرے

الوداعیہ

ایک دفعہ پھر پردیس سے بلاوہ آیا ہے اور مشرق وسطیٰ کی ایک کمپنی میں جاب آفر ہوئی ہے۔اس ماہ کے آخر میں روانہ ہوناہے۔ اپنی موجودہ ملازمت سے چند دن  پہلے میں استعفیٰ دے چکا ہوں۔ ( ملاں ڈیزل تو قاضی اور قوم کو غچہ دے گیا لیکن میں نے لبیک کہا) کل میری کمپنی کے ساتھیوں نے الوداعی پارٹی کا انتظام کیا تھا۔ کراچی سے پلانٹ مینیجر بھی آگئےتھے اور یہاں والے بھی مل ملا کر 20 بائیس افراد کی پارٹی بن گئی۔ مقامی KFC ہی مناسب مقام لگا جہاں سب مل بیٹھے۔ تمام ساتھیوں نے انتہائی محبت و خلوص کے جزبات کا اظہار کیا۔ سچ پوچھیں تو یہ تین سال انتہائی پر لطف طریقے سے ہنستے کھیلتے گزر گئے۔ پلانٹ کے مسائل اور مشکلات پربھی اکھٹے کام کرتے ہوئے کبھی گرما گرمی نہیں ہوئی، ہنسی مزاق اور جگت بازی میں کڑے سے کڑا وقت گزار ہی دیا۔
چھوٹی سی ہماری کمپنی ہے اور چند ہی لوگ ہیں اس لیے ایک دوسرے کے دکھ سکھ میں شریک رہتے ہیں۔ پاکستانی آئل کمپنیز میں کام کرنے والے ویسے بھی ایک عالمی قبیلہ سا بن چکے ہیں۔ دنیا جہاں میں پھیلے ہوئے ہیں اور کسی نہ کسی حوالے سے ایکدوسرے کو جانتے ہیں کسی نے اکھٹے کام کیا ہے تو کسی کا دوست کسی کے ساتھ تھا۔ اس وجہ سے رابطہ رہتا ہی ہے۔ یہاں بھی جب میں آیا تو چند ایک کو جانتا تھا اب جب جا رہا ہوں تو پچیس تیس لوگوں کا اپنے حلقہ احباب میں اضافہ ہی کر کے جارہا ہوں۔ ساتھیوں کا رویہ دوستانہ تھا اسی وجہ سے اچھا وقت گزر گیا۔  
پاکستان میں ورکنگ انوائرمنٹ(ماحولِ کار) زیادہ دوستانہ نہیں ہوتا جسکی وجہ میرے نزدیک صدیوں سے قائم ذات پات کا نظام اور اس پر طرہ مارشل ریسسز کا احساسِ کمتری ہے جو نظم و نسق کے نام پر اداروں کے اندرونی ربط کو تباہ کیے دے رہا ہے۔ ہمارے ادارے میں اتفاق سے اکثریت مڈل ایسٹ سے کام کر کے آئی تھی اور پھر امریکن انتظامیہ کا کوئی بندہ بنفسہ یہاں موجود نہیں ہوتا اس لیے نہ ہی مقامی افسر شاہی اور نہ ہی گورا شاہی پنپ سکی۔ بھائی لوگوں نے ” سر ” کلچر کو کافی پانی اور کھاد دینے کی کوشش کی مگر ابھی تک تو یہ ایک ٹنڈ کا ٹنڈ ہے اور مستقبل قریب  میں بھی برگ و بار کے آثار نظر نہیں آتے۔ ویسے
کتنے کم ظرف ہوتے ہیں غبارے
چند پھونکوں میں پھول جاتے ہیں
(الفاظ کے ہیر پھیر کے لیے معذرت)

9 comments on “الوداعیہ

  1. نئی منزلوں کیلیے نیک خواہشات۔ دعا ہے کہ آپ کا اگلا پڑاؤ بھی اسیطرح کے لوگوں میں ہو۔

  2. کمینے جب عروج پاتے ہیں
    اپنے ماضی کو بھول جاتے ہیں
    کتنے کم ظرف یہ غبارے ہیں
    چند پھونکوں سے پھول جاتے ہیں

    نئ نوکری مبارک ہو اور امید ہے بلاگ کو الوداع نہیں‌کہیں‌گے اور مڈل ایسٹ کی زندگی کے پہلو اجاگر کرتے رہیں۔

  3. کسی چمن میں رہو بہار بن کے رہو
    یہ یاد رکھئے گا کہ جہاں بھی جائیں آپ پچاس سال بعد بھی پاکستانی ہی کہلائیں گے ۔ اسلئے اپنے وطن کیلئے ہمیشہ اچھا ہی سوچئے گا ۔

  4. خیریں جاؤ
    امید ہے بلاگ سے اور اردو محفل سے ناتہ رہے گا آپ کا۔

  5. شاکر بھائی نے ”نتھ“ قسم کا ”ناتہ“ لکھا ہے۔ 😀

  6. ساجدصاحب ، میرا پاکستان(؟؟ )صاحب،محترمی اجمل صاحب اور شاکر ( آپ کو بھی اللہ صاحب بنائے ) بہت بہت شکریہ ان محبتوں اور دعاؤں کا۔
    میرے کام کی نوعیت اسطرح ہے کہ ایک ماہ مڈل ایسٹ اور ایک ماہ گھر اس لیے کچھ تبدیل ہونے والا نہیں ہے خاطر جمع رکھیں۔
    (ساجد اقبال! شاکر کی لگن اور خلوص نے واقعی کئی لوگوں کو ” نتھ ” ڈال رکھی ہے۔🙂 )

  7. بہت اچھے رضوان لگتا ہے ابھی دربدری ختم نہیں ہوئی تمہاری زندگی سے ۔ یہ اچھی خبر سنائی کہ ایک ماہ گھر بھی رہا کرو گے ، گھر سے مراد اسلام آباد ہی ہے نہ

  8. خیر مبارک منیر بھائی۔
    آپکو بھی عید کی خوشیاں‌ مبارک ہوں۔
    محب بالکل ٹھیک سمجھے ہو۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: