4 تبصرے

پاؤں کا چکر

ابھی پاؤں میں چکر باقی ہے۔ سوچا تو یہ تھا کہ ذرا اطمینان اور ٹھہراؤ آجائے تو احوال لکھ دیتے ہیں مگر اس عالم بے ثبات میں تو ایسا ہوتا دکھتا نہیں ہے دوسرے عالًموں کا عِلم ہمیں نہیں ہے۔
نظامی صاحب نے Plumeria کو پسند کیا اور فرمائش کی اس دن میں پردیسی ہوچکا تھا اور باوجود کوشش کے اس کے بعد کے 28 دن میں جواب نا لکھ سکا اس کی ماسوائے میری ازلی کوتاہی کہ وقت کا نظم قائم نہیں رکھ سکتا اور کوئی وجہ نہیں۔ بدھ کو واپس آیا تو خاتونِ خانہ نے تمام ضروری کام کاج نمٹا رکھے تھے آرام کرنے کے لیے؟ جی نہیں گھومنے پھرنے کے لیے لہزا جمعہ کو درہ آدم خیل کہ آجکل جس کا شُہرہ چہاردانگ عالم میں بکھرا ہوا ہے اس کے قرب و جوار میں ایک شادی ( صحیح لفظ نکاح وہ بھی حلق کی گہرائیوں سے حلوے والی نہیں بلکہ عمامے اور کلاشنکوف والی “ ح “ کے ساتھ) میں شرکت کی۔ گرلز اسکول اور ڈگری کالج جلانے والی مخلوق کا رعب داب دیکھا کہ شادی کی تقریب سہمی سہمی سی رہی۔ آفریدیوں کی روایتی مہمان نوازی اور گرم جوشی سے لطف اندوز ہوئے گو کہ حالات کی وجہ سے پھیکی پھیکی سی دکھتی تھی۔ میری بچیوں نے پختون گاؤں کا حقیقی منظر دیکھا اور منظر تو آتے جاتے موٹر وے کے آس پاس تھا، جو اسلام آباد پشاور موٹر وے کو بلاشبہ پاکستان کی خوبصورت ترین موٹروے کہلوانے کا حقدار ٹھہراتا ہے۔ ایسا جاذب نظر لینڈ اسکیپ اور کہیں نہیں ہے جسمیں دریا، پہاڑ، ہریالی، گاؤں کے کچے مکان اور گہرے شوخ رنگ زیبِ تن کیے خانہ بدوش عورتیں اور گہرے اودے بادلوں کا پس منظر واہ کیا بات ہے۔ جاتے ہوئے اس منظر میں ایسا کھویا کہ موٹر وے  پولیس کے ریڈار نے ہائی اسپیڈ پر چھاپ لیا اور 750روپے کی بقول شخصے پھًکی تجویز کی لیکن جانے کیوں منہ کا ذائقہ بد مزہ نہیں ہوا کیوں کہ غلطی کی تھی سو سزا پائی ۔
اب کل پھر جانا ٹھہرا ہے سوئے ارضِ لاہور دیکھیے نصیبا ہمیں کیا دکھاتا ہے۔
واپسی پر ملاقات رہے گی وہی
 “ یار زندہ صحبت باقی“

4 comments on “پاؤں کا چکر

  1. موٹر وے کا یہی تو مسئلہ ہے ۔ پاؤں دبتا ہی چلا جاتا ہے اور احساس اُس وقت ہوتا ہے جب چھاپ لئے جاتے ہیں ۔ اللہ کا کرم ہے کہ میرا پاؤں اتنا منہ زور نہیں ہے ۔
    http://www.theajmals.com/blog
    اپنے روابط میں میرے بلاگ کا پتہ درست کر لیجئے

  2. واہ،
    رضوان بھائی درہ کے کباب کھائے؟ اب کیا پھر سنگاپور اڑنے کا ارادہ ہے؟

  3. آپ کا ایک ٹھکانہ کون سا ہے؟ ابھی پچھلے دنوں تو سنگاپور تھے؟ پاکستان واپس آ گئے ہیں کیا؟
    اور تصویریں کہاں ہیں؟ :what

  4. افتخار اجمل صاحب آپکا لنک اپڈیٹ کردیا ہے شکریہ اس ذرہ نوازی کا۔
    ساجد پہلے بتانا تھا نا کہ درہ میں کباب بھی ملتے ہیں مجھے تو یہی ڈر تھا کہ کہیں بیگم کو باڑہ بازار کی بھنک نہ پڑجائے ورنہ واپسی کا کرایہ میزبانوں سے لینا پڑتا۔ میزبانوں نے خاطر تواضع میں کسر نہیں چھوڑی ہماری اپنی تنگ دامنی بلکہ تنگ شکمی آڑے آگئی تھی۔
    ماورہ ٹھکانہ تو اپنا یہی پاکستان ہے باقی دانہ پانی کھینچ لے جاتا ہے تو ساتھ ساتھ چڑیوں کی طرح چلے جاتے ہیں۔ سنگاپور دو دفعہ ایک ایک ماہ کا ٹور تھا کمپنی کی طرف سے۔ اب قطر اور پھر پاکستان انہی دونوں مقامات میں پایا جاتا ہوں۔

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: