7 تبصرے

یومِ آزادی مبارک

وسوسوں اندیشوں سے بھرا ایک اور یومِ آزادی مبارک

ملک تاریخ کے نازک موڑ سے گزر رہا ہے ہمارے بڑوں نے یہ راگ اتنا الاپا ہے کہ شیرآیا شیرآیا کی طرح آج اس واقعتًا نازک موڑ پر بھی ہم اپنی خر مستیوں کی اسپیڈ کم کرنے پر تیار نہیں ہیں۔

7 comments on “یومِ آزادی مبارک

  1. یہ موڑ کیچھ زیادہ ہی طویل ہو گیا ہے۔ یا پھر یہ بہاڑوں والے موڑ ہیں جہاں بندہ پہاڑوں (مشکلات( کے سحر میں ایسا جکڑا جاتا ہے کہ جب تک ٹکر نہ ہو عقل نہیں آتی۔
    ٹرم ویسے خوب ہے تاریخ کے نازک موڑ۔ یہ موڑ ہمیشہ پاکستان کے حصے کیوں آتے ہیں؟ کیونکہ ہم سب اپنی اپنی جگہ پاکستان کے لئے نازک موڑ بن چکے ہیں۔

  2. اللہ سے دعا ہے کہ یہ نازک موڑ جلدی سے گزر جائے اور ہم بغیر کسی لڑکھڑاہٹ کے ایک سیدھی اور مضبوط سڑک پر رواں دواں ہو جائیں۔آمین۔ :d

    آپ کو بھی یومِ آزادی بہت مبارک ہو۔

  3. جہاں‌اکسٹھ سال گزر گئے وہاں باقی بھی گزر جائے گی اور خطرے کی گھنٹیاں بجانے والے بجاتے رہیں‌گے۔ بس یہی دعا ہے کہ خدا پاکستان کو‌ایک اور بنگلہ دیش بننے سے بچائے۔

  4. بد تمیز، ماوراء اور افضل صاحب
    خدا پاکستان کو ان بھول بھلیوں سے نکال کر سیدھی شاہراہ پر گامزن کرے۔ آمین ثم آمین

    یہ آرزو بھی بڑی چیز ہے مگر ہمدم
    وصالِ یار فقط آرزو کی بات نہیں

  5. میں سوچ رہا ہوں جو ممالک خدا کو نہیں مانتے، وہ کیسے اب تک آزاد ہیں؟
    :hmm

  6. یوم آزادی مبارک ہو آپ کو!

  7. فیصل بڑے پتے کی بات کی ہے آپ نے بلکہ وہی ممالک حقیقتًا ” آزادی” سے رہ رہے ہیں‌۔ :hmm

    شکریہ شعیب اور ” خیر مبارک “

جواب دیں

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

آپ اپنے WordPress.com اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Twitter picture

آپ اپنے Twitter اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Facebook photo

آپ اپنے Facebook اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Google+ photo

آپ اپنے Google+ اکاؤنٹ کے ذریعے تبصرہ کر رہے ہیں۔ Log Out / تبدیل کریں )

Connecting to %s

%d bloggers like this: